Saturday, August 3, 2013

رمضان کہانی

رمضان کے شروع ھوتا ھے چاند پہ جھگڑے سے اس بار پاکستان بھر میں ایک ھی دن رمضان شروع ھوا ھو خوش آئند بات ھے














رمضان شروع ھوتے ھی شیطان قید کر دئیے جاتے ھیں مگر اس چیلے دنیا میں آزاد گھومتے رھتے ھیں -



















رمضان شروع ھوتے ھی شیطان کو قید کر دئیے جاتے ھیں مگر مہناگئ کا جن کھل کے سامنے آجاتا ھے -









رمضان میں سب سے بڑی زیادہ فکر افطاری کی ھوتی ھے جیسے پکوڑوں سموسوں سے روزہ کھولنا واجب ھے - کھانا دو وقت کھایا جاتا ھے مگر کچن کا بجٹ دگنا ھو جاتا ھے











سب سے اچھی بات یہ ھے رمضان میں مساجد بھری ھوئ نظر آتی ھیں رمضان میں اتنی رحمتیں اور برکتیں جمع کر لیتے ھیں جو سال بھر کے لیے کافی ھوتی ھیں







رمضان میں روٹین چینج ھو جاتی ھے ۔








افطار پارٹیاں بزنس اور سیاسی رابطوں کے بڑھانے کا زریعہ بنتی ھیں - لوگ افطار پارٹیز کے انتظار میں رھتے ھیں - بہت سی تنطیمیں اور لوگ غرباء کی افطاری  کرواتے ھیں ۔ صدقات  دل کھول کر دئیے جاتے ھیں





دنیا کے مختلف ممالک میں مسلمان دوسرے مسلمان کے خلاف جہاد کرتے نظر آرھے ھیں دشمن تو مارتے ھی ھیں اپنے بھی مار رھے ھیں







اس بار سحر اور افطاری ٹی وی کے ساتھ ھوتی ھے - کھیل کود میں کئ گھنٹے گزر جاتے ھیں سب ٹی وی چینلز اس کام میں ثابت کرنے کی کوشش کر رھے ھیں وہ سب سے کامیاب جا رھے ھیں ریٹنگ کی ڈور لگی ھوئ ھے
سوشل میڈیا پہ کہا جا رھا ھے رمضان میں شیطان ٹی وی میں قید کر دئیے جاتے ھیں



رمضان کے دن تھوڑے رہ گئے ھیں شیطان آزاد ھو جائے گا اور  پھر سب کچھ نارمل ھو جائے گا سر سے ڈوپٹہ پھر گلے میں آجائے گا نعت کی جگہ گانے چلیں گے  سحری اور افطاری کی نشریات پیش کرنے والے کسی اور تماشے کے ساتھ سامنے آجائیں گے ان کی روزی روٹی کا یہی زریعہ ھے