Sunday, February 1, 2015

میرا رب

پارلر سے نکلتے ھوئے حسبِ عادت میں نے خدا حافظ کہا ۔۔ میرے ساتھ جو  میری دوست تھی اس نے میرا بازو زور سے دبایا - میں نے ا س کے چہرے کی طرف دیکھا تو اس کے چہرے کے عجیب سے تاثرات تھے مجھے حیرت ھوئ میں نے ایسا کیا کہا یا کیا کر دیا جو وہ مجھے ایسے دیکھ رھی ھے 
وہ سرگوشی میں بولی تم نے اسے خدا حافظ کہا وہ تو ھندو ھے 
اس میں اتنی بڑی بات کیا ھے اللہ ھی حفاظت کرنے والا ھے 
مگر وہ تو بھگوان کو مانتے ھیں 
اگر اللہ کو نہیں مانتے تو کیا ۔ 
اس کی آواز رونے والی ھو گئ اللہ حافظ کا مطلب ھے اللہ حفاظت کرے ۔ جب وہ اللہ کو نہیں مانتی تو ھمارا اللہ کیوں حفاظت کرے 
میرا بے اختیار ہنسی آگئ - پہلے بھی کسی سے اسی بات پہ بحث ھو چکی تھی 
گویا ہم اللہ کو مانتے ہیں ہماری حفاظت کی ذمہ داری ہمارے اللہ پہ فرض ھے ۔۔ ہمارا اللہ کیوں اوو ٹائم لگائے اور ان لوگوں کی
حفاظت کرے جو اسے مانتے نہیں ہیں
 مطلب   کیا ہے  اس کا ؟؟؟
کیا واقعے  کوئ بھگوان ھے ؟؟ جس میں اتنی طاقت ہے وہ پیدا کرے حفاظت کرے لوگوں کی دعائیں سنے ؟؟
جب کوئ بیمار ھو تو بیماری میں شفاء دے ۔زندگی دے موت دے - کیا کوئ بھگوان ہے جو لوگوں کی دعائیں سن سکتا ھے ؟؟
نہیں ------ بالکل بھی نہیں 
کوئ اللہ کہے کوئ بھگوان ۔ کوئ گاڈ ۔۔ کوئ گرو کوئ سائیں    - رب کہو یا مولا 
پیدا کرنے والا ایک ھے وہ زندگی دیتا ھے موت دیتا ھے ۔ محنت کا پھل دیتا ھے وہ کوئ بھی ھو کوئ مسلمان ھو ھندو عیسائ یا دھریا 
ہے تو سبھی اس کے بندے ۔ ہاں تقویٰ کا فرق ہے ۔ 
دنیا میں اللہ کی پیدا کی ھوئ مخلوق چار سو نظر آتی ہے ۔ کوئ بھی بے مقصد نہیں ۔اللہ کسی کو بے مقصد پیدا نہیں کرتا  اس کی حکمت  ہم نہیں جانتے ۔ آنے والے وقت میں کیا ھوگا آج سے پچاس برس بعد  آج سے پانچ سو برس بعد مگر اللہ سب جانتا ھے ۔
ھزاروں برس پہلے جب ھندوؤں نے اللہ کو چھوڑ کر بتوں کو پوجنا شروع کیا مگر اللہ نے انھیں تباہ و برباد نہیں کیا اس کے لیے تو کچھ بھی مشکل  نہیں - صرف ایک کن کہنے کی دیر ھے پھر سب کچھ ھونے لگتا ھے - اللہ جانتا تھا انھی بت پرستوں میں سے اللہ کے ماننے والے نیک لوگ پیدا ھوں گے ۔ ان ھندو عیسائیوں یا  دھریا لوگوں کی نسل سے کتنے نیک لوگ پیدا ھوں گے اللہ علم رکھتا ھے  -
ہم جلدی چاھتے ہیں ھر کام ھر فیصلہ میں  ۔ اگر اللہ نہیں کرتا تو ہم ھر کام ہر فیصلہ  ھر سزا خود دینا چاھتے ہیں 
اگر اللہ ہمارے ہر عمل کی سزا فوراً اور سخت دے تو شاید ہم جی   نہ پائیں  اور سہہ نہ پائیں -  جب ھماری اپنی باری آتی ھے تو ھم مان لیتے ہیں اللہ بہت رحمان  ھے ستر ماؤں سے زیادہ  محبت کرنے والا  ۔ کیا اللہ صرف ھم سے  ستر ماؤں سے زیادہ محبت کرتا ھے اور لوگوں سے نہیں ؟؟؟  ماں کے تو دس بچے بھی ھوں وہ سب سے محبت کرتی ہے چاھے کوئ معذور ہو ۔ چور ہو یا ڈاکو ۔ اپنے آوارہ بیٹے کے لیے زیادہ تڑپتی ہے آخری سانس تک  دعا کرتی‌ہے  اللہ کے حضور روتی  کہ اس کے بچے کو ھدایت دے ، بد دعا نہیں کرتی  مارتی نہیں ۔ اگر اس کا آوارہ بچہ سدھر جاتا ہے تو  ہر زیادتی کو بھول  کر سینے سے لگا لگتی ہے ۔ اللہ  رب العالمین ہے  سب کا مالک اور خالق ہے 
میں  جانتی ہوں میرا رب سب کا پیدا کرنے والا ھے رزق دینے والا ھے حفاظت کرنے والا ہے ۔ جب کوئ دنیا پانے کے لیے محنت کرتا ہے تو وہ اسے دنیا عطا کرتا ہے جب کوئ آخرت کے لیے محنت کرتے ہے تو اسے اجر دیتا ھے  ۔ 
میرے اللہ حافظ نہ کہنے سے انھیں نہ ھی تباہ کرے گا  ۔ میرے سلام نہ کرنے سے ان کی سلامتی کو کوئ خطرہ نہیں ھوگا - 
میں اتنا ضرور کرتی  ہوں  میں سب کو بتاتی ہوں میرا ایمان کیا ہے میرا اللہ پہ کیسا یقین  ہے  ۔ میں کسی سے نفرت نہیں کرتی  
یہ تصور  کرنا بھی شرک سمجھتی ہوں  ھندوؤں کا خالق بھگوان ہے ان کا مالک ان کا رازق  ان کی حفاظت کرنے والا  کوئ   بھگوان یا گاڈ ہے 
میں اسے رب کہوں مولا  اللہ یا خدا  وہ جانتا ہے میں اس سے  بات کر رھی  ہوں کسی اور کو نہیں پکار رھی  ۔ وہ دل کی آواز  بھی سن لیتا ہے  جب کوئ بات سوچتی ہوں  وہ پھر بھی جان لیتا ہے  وہ میرا   رب ہے