Tuesday, May 17, 2011

منظر نامہ پہ ایک انٹرویو


منظر نامہ کے قارئین کو خوش آمدید۔
سلسلہ شناسائی میں آج ہم ایک بلاگر مہمان کے ساتھ حاضر ہیں۔ آپ اردو بلاگنگ میں بہت پرانی بھی نہیں اور بہت نئی بھی نہیں۔ باقاعدہ اردو بلاگنگ کے آغاز سے پہلے آپ القمر پر بھی لکھا کرتی تھیں۔ دسمبر 2008 سے آپ نے اردو بلاگنگ کا آغاز کیا۔ اور ماشااللہ باقاعدگی سے بہترین لکھ رہی ہیں۔ سعدیہ جو سوچتی ہیں، جو محسوس کرتی ہیں، وہ اپنے بلاگ پر لکھتی ہیں اور ہم سب کے ساتھ شئیر کرتی ہیں۔ آج ہم ان سے اردو بلاگنگ اور کچھ ان کے بارے میں جاننے کی کوشش کریں گے. تو آئیے ۔۔سعدیہ سحر سے بات چیت کا آغاز کرتے ہیں۔
خوش آمدید سعدیہ،
شکریہ ماوراء
- سعدیہ، سب سے پہلے ہم آپ کے بارے کچھ جاننا چاہیں گے۔ آپ کا خاندانی پس منظر، تعلیم، پیشہ یا آپ کیا کرتی ہیں؟
@ میرا تعلق زمیندار فیملی سے ھے ابو وکیل ہیں امی نے ٹیچنگ کا کورس کیا ہے مگر جاب نہیں کی ۔۔۔ بچپن سے میری خواہش تھی میں وکیل بنوں مگر ابو کا خیال تھا لڑکیوں کے لیے وکالت ایک مشکل پیشہ ھے اگر جاب کرنی پڑے تو بنک کی جاب بہتر ھے اس لیے میں نے اکنامکس پڑھی اور جب لکھنا شروع کیا تو ہر تِحریر میں حساب کتاب پرسنٹ ایج بہت ہوتا تھا لوگوں کے کہنے پہ چھوڑ دیا
- آپ کی جائے پیدائش اور حالیہ مقام کون سا ہے؟
@ میں لاہور میں پیدا ہوئی پلی بڑھی آج کل جرمنی میں ہوتی ہوں.
- بلاگ کب لکھنا شروع کیا اور بلاگ بناتے ہوئے آپ نے کیا سوچا تھا کہ آپ کو بلاگنگ کیوں کرنی چاہیے یا بلاگ کے آغاز کا بنیادی مقصد کیا تھا؟
@ بلاگ پچھلے سال دسمبر میں بنایا تھا مگر باقاعدہ لکھنے کا آغاز جنوری سے کیا – بلاگ اپنے دل کی بات بلکہ دل کی بھڑاس نکالنے کا بہترین زریعہ ھے اور کوئی خاص مقصد نہیں تھا.
- اس بلاگ سے پہلے آپ القمر پر بھی بلاگنگ کیا کرتی تھیں۔ وہ تجربہ کیسا رہا ، کچھ اس بارے میں بتائیں؟
@القمر پر لکھنے کا تجربہ ٹھیک رہا تعریف بھی بہت ہوئی تنقید بھی ہوئی.
- لکھنے کا شوق کب سے ہے؟
@بچپن کہانیاں لکھنے کا شوق تھا لکھ کر اپنی بہن یا اپنی دوستوں کو سنا دیتی تھی کبھی کسی رسالے میں نہیں بھیجی پہلی بار ساتویں کلاس میں اخبارِ جہاں ایک تحریر بھیجی جو اس ماہ کی بہترین تحریر قرار پائی اس کے بعد ڈائری باقاعدگی سے لکھتی رہی، کبھی کبھی بچوں کے رسالوں میں بھیجتی تھی کچھ کہانیاں لکھی ہیں ایک کہانی “کھلے آسمان تلے” جس کی تیرہ اقساط تھی ایک میگزین میں چھپی سیاست پہ دل غصے سے پھٹنے لگتا ہے تو لکھتی ہوں.
- آپ بلاگ پر کن کن موضوعات پر لکھتی ہیں ؟
@ کوئ مخصوص موضوع نہیں جو بات دل پہ لگ جائے اسی پہ لکھتی ہوں.
- یہ بتائیے کہ بلاگنگ کے بارے میں پہلی بار آپ کو کب اور کیسے پتا چلا تھا؟
@پاک نیٹ پہ لوگوں نے بلاگ اور ورڈ پریس کے بارے میں کافی کچھ لکھا وہی سے دیکھ کر بلاگ بنایا.
- بلاگنگ کے آغاز میں کن کن مشکلات کا سامنا رہا؟
@کوئی خاص مشکل نہیں ہوئی بلاگ بنانے لگی تو حیرت انگیز طور پر فوراً بن گیا اس کی سیٹنگ کی سمجھ نہیں آرہی تھی ایک دن سیٹنگ کرتے کرتے اردو کی بورڈ غائب ہو گیا کافی مشکل سے وہ ٹھیک ہوا وہ دن ہے اور آج کا دن ہے کبھی بلاگ چھیڑا ہی نہیں.
- کیا آپ سمجھتی ہیں کہ بلاگنگ سے آپ کو کوئی فائدہ ہوا ہے؟ یا کیا فائدہ ہوسکتا ہے؟
@ فائدے سےکیا مراد ہے ؟؟؟ عزت دولت شہرت ؟؟؟؟ لکھنے سے دل کو سکون ملتا ھے اسی لیے لکھتی ہوں – اور لکھنے سے جو دل کو سکون ملتا ھے ہر لکھنے والا جانتا ہے.
- اگر آپ کو اردو کے ساتھ تعلق بیان کرنے کو کہا جائے ، تو اس کو کیسے بیان کریں گی۔
@ اردو ہماری مادری زبان ھے اور اردو سے ہمارا وہی تعلق ھے جو ایک ماں کے ساتھ ہوتا ھے اس پہ ایک بلاگ لکھا تھا — میں بولتی سوچتی سمجھتی غصہ پیار محبت اردو میں ہی کرتی ہوں بلکہ سپنے بھی اردو میں ہی دیکھتی ہوں.
- آپ کیا سمجھتی ہیں کہ اردو کو وہ مقام ملا ہے، جس کی وہ مستحق تھی؟
@ کیا پاکستان میں اردو کو کوئی مقام بھی حاصل ہے ؟؟؟؟ میرے علم میں یہ نہیں ہے.
بہت افسوس سے کہنا پڑتا ھے جب سے پاکستان بنا ہے اردو کے ساتھ ستیلے بچے کا سا سلوک ہوتا آرہا ہے. دفتری کام انگلش میں ہوتے ہیں ہمارے صدر وزیرِ اعظم اپنی قومی زبان پہ غلط انگلش کو ترجیح دیتے ہیں انگلش میں خطاب کرتے ہیں ہمارا بجٹ حلف برداری کی تقریب انگلش میں ہوتی ہے وہ لوگ یہ بات بھول جاتے ہیں کہ اردو ہماری قومی زبان ہے اور ستر فیصد سے زائد لوگ انگلش نہیں سمجھتے پاکستان میں انگلش کو ترقی کا ضامن سمجھا جاتا ھے یہی وجہ ہے کہ ایک عام انسان بھی اگر اسے ایک اچھا اردو اسکول میسر ہو اس کی نسبت وہ ایک عام درجے کے انگلش اسکول میں دوگنی فیسوں کے ساتھ اپنے بچوں کو پڑھانا زیادہ پسند کرتا ہے اردو کو ایک رابطہ زبان بنانے کی کسی نے کوشش ہی نہیں کی اندونِ سندھ بلوچستان اور سرحد میں بہت سےلوگ اردو نہیں سمجھتے جب زبان ایک نہیں اپنے مسائل ایک زبان میں بیان نہیں کر سکتے تو دلوں کے فاصلے کیسے کم ہوں گے جب بھی اس بارے میں سوچوبہت دکھ ہوتا ہے.
- آنے والے دس سالوں میں اپنے آپ کو اور اردو بلاگنگ کو کہاں دیکھتی ہیں؟
@ آنے والے دس منٹوں کا کچھ نہیں کہہ سکتے ہاں جہاں تک بلاگنگ کی بات ھے جتنی تیزی سے انٹر نیٹ عام ہورہا ہے صرف ایک کلک سے دنیا بھر کی خبریں آپ کے سامنے ہوتی ہیں اور ایک عام انسان کا نقطہ نظر سمجھنےکے لیے بلاگنگ بہترین زریعہ ہے اردو بلاگرز کی اکثریت عام لوگوں پہ مشتمل ھے پروفیشنل لوگ نہیں ہیں عام لوگ جن کے وسائل اور مسائل عام ہیں جو عام لوگوں میں رہتے ہیں جینے کے لیے جدوجہد کرتے ہیں غلط اور صحیح کو سمجھنے کی کوشش کرتے ہیں جو دیکھتے ہیں وہ لکھتے ہیں یورپ میں بلاگرز کا جو مقام ہے وہ اردو لکھنے والوں کو حاصل نہیں مگر آنے والے وقت میں مثبت تبدیلی آئے گی.
- بلاگنگ کے علاوہ دیگر کیا مصروفیات ہیں؟
@کچھ اور نہیں کرتی جاب کی تلاش میں ہوں معذور بچوں کا ایک اسکول ہمارے قریب کھلا ہے مگر وہاں جگہ نہیں ملی میں زندگی کے اس رنگ کو دیکھنا چاہتی ہوں.
- کسی بھی سطح پر اردو کی خدمت انجام دینے والوں اور اردو بلاگرز کے لیے کوئی پیغام؟
@میرے خیال میں آج کل انٹرنیٹ کے دور میں سب سے بڑی اردو کی خدمت ان لوگوں نے کی ہے جنہوں نے اردو کا کی بورڈ شروع کیا یونی کوڈ میں اور لکھنے کا سلسلہ شروع کیا رومن اردو لکھتے لکھتے لوگ اردو کو بھولنے لگے تھے اور وہ لوگ نایاب کتابوں کو منظرِ عام پہ لا رہے ہیں اور وہ استاد جو خلوص دل سے سہولتیں نا ہونے کے باوجود بچوں کو پڑھا رہے ہیں قابلِ ستائش ہیں بلاگرز سے یہی کہنا ہے یہ نا دیکھیں کتنے لوگ پڑھتے ہیں جو محسوس کرتے ہیں اپنے ضمیر کی آواز سنیں ضرور لکھیں اپنے زندہ ہونے کا ثبوت دیں.
- آپ کی زندگی کا مقصد کیا ہے ،کوئی ایسی خواہش جس کی تکمیل چاہتی ہوں؟
@ ابھی زندگی کو سمجھ رہی ہوں مقصد نہیں جانتی کیا ہے خواہش نہیں کئی خواہشات ہیں.
کچھ سوال ذرا ہٹ کے۔۔۔
پسندیدہ:
1۔ آپ کی پسندیدہ کتاب؟ یا کن موضوعات پر کتابیں پڑھنے میں دلچسپی رکھتی ہیں ؟
@ بچپن میں ٹارزن کے کارنامے عمروعیار کی چالاکیاں اشفاق احمد کی کہانیاں پڑھتے ھوئے گزرا ڈائجسٹوں نے متاثر نہیں کیا ابو کو ابن انشاء پسند تھا ان کی کتابیں پڑھیں کرنل محمد خان شفق الرحمن صدیق سالک یوسفی کو پڑھا اور یونس بٹ کی کتابیں پچھلے دو تین سال میں پڑھیں ایک بار ایک دوست کے گھر ایک ڈائجسٹ کی ورق گردانی کرتے ھوئے عمیرہ احمد کا ناول پیر کامل پڑھنے کا اتفاق ھوا اس ناول نے ہر ماہ ڈائجسٹ خریدنے پہ مجبور کیا مجھے پیار محبت کی انڈین مویز ٹائپ کی کہانیاں پسند نہیں میں خاموش محبت کی قائل ھوں جس میں اظہار نہیں ہوتا انسان دوسرے کے ہر احساس کا خیال رکھتا ھے یہ بات فرحت اشتیاق کا ناولز میں نظر آئی عمیرہ احمد اور فرحت اشتیاق میری فیوریٹ ہیں.
2۔کیا آپ کوشعر و شاعری سے لگاؤ ہے؟ اگر ہے، تو آپ کے پسندیدہ شاعر اور پسندیدہ شعر کون سا ہے؟
@شاعری اپنے جذبات کے اظہار بہترین صورت ہے چند الفاظ میں اپنے دل کی بات کہنا ۔۔۔ میں نےغالب کو پڑھا کافی مشکل ہے فیض کی شاعری اچھی لگی اس کے علاوہ اعتبار ساجد محسن نقوی پروین شاکر کو پڑھا آزاد شاعری میں امجد اسلام امجد ان کی کئ نظموں کو پڑھ کر لگتا ھے الفاظ بہتے ہیں احمد فراز میرے فیوریٹ ہیں ان کی شاعری میں جو تمثیلیں ہیں وہ زبردست ہیں ان کا ایک شعر پڑھا تھا پھر ایک بار پڑھا بار بار پڑھا اور ہمیشہ سے پسندیدہ ہے.
ہم تو محبت میں بھی توحید کے قائل ہیں فراز
ایک ہی شخص کو محبوب بنائے رکھنا
3۔ کہتے ہیں کہ رنگوں کے انتخاب سے کسی حد تک انسان کی شخصیت کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے، تو ہم آپ کے پسندیدہ رنگ کے بارے میں بھی جاننا چاہیں گے؟
@مجھے سفید اور آسمانی رنگ پسند ہے اس کے علاوہ ریڈ اور گرین ۔۔۔۔۔۔ اب شخصیت کا اندازہ لگا کر مجھے بھی بتائیں.
4۔ کونسا کھانا آپ بہت شوق سے کھاتی ہیں؟
@مجھے اپنی امی کے ہاتھ کی بنی ہوئی کڑھی بہت پسند ہے اس کے علاوہ بریانی بلکہ چاول سے بنی کوئی بھی ڈش چکن تکہ سیخ کباب پوری لسٹ آرہی ہے ذہن میں ساتھ منہ میں پانی بھی.
5۔ آپ کا پسندیدہ موسم کون سا ہے؟
مجھے ہر موسم اچھا لگتا ھے بہار خزاں سردی گرمی اور گرمی کی بارش خاص طور پہ جب ٹیریس کی چھت پہ بارش پر بارش برستی ہے اور شیشے پہ گرنے سے جو چھم چھم کی آواز اتی ہے وہ بہت اچھی لگتی ھے آدھی رات کہ بھی جب بارش ہوتی ہے میں ٹیریس پہ جا کر بیٹھ جاتی ہوں.
غلط/درست:
1۔ مجھے بلاگنگ کی عادت ہو گئی ہے؟
@جی کافی حد تک
2۔ مجھے اکثر اپنے کئے ہوئے پر افسوس ہوتا ہے؟
@اگر کوئی غلطی ہو جائے تو افسوس ہوتا ہے.
3۔ مجھے ابھی بہت کچھ سیکھنا ہے؟
@درست
4۔ میں ایک اچھی دوست ہوں؟
@اگر کسی کو اپنا دوست مان لوں پھر ہر چھوٹی چھوٹی بات کا خیال رکھتی ہوں
5۔ مجھے غصہ بہت آتا ہے؟
طوفانی
اگر آپ سمجھتی ہیں کہ ہمیں کچھ پوچھنا چاہیے تھا، لیکن ہم نے پوچھا نہیں اور آپ کچھ کہنا چاہتی ہوں تو آپ کہہ سکتی ہیں۔
@آپ نے سب کچھ پوچھ لیا میں نےبھی سب کچھ بتا دیا کسی نے کچھ اور پوچھنا ھو تو پوچھ سکتا ہے.
سعدیہ، اپنا قیمتی وقت نکال کر منظر نامہ کے لیے جواب دینے کا بہت بہت شکریہ۔
شکریہ مارواء میں نےبہت سے لوگوں سے انٹر ویو لینے کا سوچا تھا مگر کبھی انٹرویو دینے کا نہیں سوچا تھا.انٹرویو دیتے ہوئے میرے چہرے پہ ویسی ہی مسکراہٹ تھی جیسی زرداری کے چہرے پہ ہوتی ہے.کوشش کی ہے جیسے سوچتی ہوں یا جیسی ہوں ویسے ہی جواب دوں-
منظر نامہ کی ٹیم کا شکریہ اور سب پڑھنے والوں کا بھی.