Tuesday, October 9, 2012

خالص سجدہ





میں نے ابھی یہ تصویر دیکھی ۔۔ دیکھ کر سوچنے لگی کتنا مخلص اور خالص ھے اس بچے کا سجدہ ۔۔۔ بنا کسی لالچ کے بنا کسی خواہش کے بنا کسی گلے شکوے کے بے غرض ھے اس بچے کا سجدہ ۔۔ نہ یہ جتا رھا ھے اس نے ابھی تک اللہ کی کتنی عبادت کی ھے اور ایک اللہ ھے اس نے ابھی تک اس کی خواہش پوری نہیں کی -----

نہ یہ بچہ یہ جتا رھا ھے کہ اس نے جتنی بھی عبادت کی ھیں اس کا بدلہ جنت میں ضرور ملنا چاھیے -- دنیا کی ڈھیروں خواھشیں آرزوئیں ۔۔ پھر کئ مصروفیات جن کی وجہ سے نماز بھی جلدی جلدی ادا کی جاتی ھے ۔۔۔

بچے مسلمان ھوتے ھیں ماحول انھیں شعیہ سنی بریویلی دیوبندی بناتا ھے ۔۔ ان کے دلوں میں مذھبی تعصب بھر جاتا ھے ۔ کون سا فرقہ کون سے مسلک کے لوگ کافر ھیں یا واجب القتل ھیں

کبھی سندھی بلوچی پٹھان اور پنجابی بنا دیتا ھے اور کبھی ذات کی اونچ نیچ کون گیلانی ھے کون راجپوت کون ملک  -- پھر جب بڑا ھوتا ھے تو پتا چلتا ھے وہ جاگیر دار ھے باقی کمی کمین ھیں  نیچ ذات کے لوگ وہ کتنا اعلیٰ ارفع ھے ایک بڑے رتبے والا اور اپنے رتبے اور مقام کو برقرار رکھنے کے لیے اسے دل میں نفرت کو زندہ رکھنا ھوگا نہیں تو ان جیسا ھو جائے گا ۔۔۔۔۔

کتنے خانوں میں نفرت بھری جاتی ھے تہہ در تہہ پوری زندگی وہ نفرتیں نبھاتے ھوئے گزار دیتا ھے - خالص انسان بننے کا وقت کب ملتا ھے وہ انسان جو اللہ نے بنایا تھا - ھم ان سب لوگوں کو دیکھتے ھیں جو دنیا کے رنگ میں رنگے ھوئے ھوتے ھیں اللہ کا بندہ کون ھے ؟؟؟


مسلمان تو بچے ھوتے ھیں بڑے ھو کر تو سب ایک دوسرے کی نظر میں کافر بن جاتے ھیں - پتا نہیں اللہ کی نظر میں کون کیا ھے مسلمان ھے یا کافر  ---

خالص سجدے تو بس بچوں کے ھوتے ھیں پھر تو دنیا جکڑ لیتی ھے اپنے بس میں کر لیتی ھے اور پھر آخری سانس کے ساتھ آزادی ملتی ھے جسم تو تابوت میں قید ھو جاتا ھے اور روح آزاد ھو جاتی ھے اور روح بھی وہ جو دنیا کی آلودگیوں میں لتھڑی ھوئ روح